نجکاری کے مقاصد
نجکاری کے بنیادی مقاصد مندرجہ ذیل ہیں:
٭ نجکاری کے مجوزہ اداروں کی عملی استعداد اور مجموعی کارکردگی کو بہتر بنانا اور مسابقت کو فروغ دینا۔
٭ حکومت پر سرکاری اداروں کے مالیاتی بوجھ کو کم کرنا اور دیگر اہم ضروریات پر مذکورہ وسائل لگانا جیسے سماجی شعبوں اور مادی و ٹیکنالوجی کے انفراسٹرکچر کی ترقی نیز صنعت کاری کے عمل کو تیز تر کرنا ہے۔
٭ شیئر ہولڈرز کی تعداد میں اضافے اور نئے اداروں کی فہرست سازی کے ذریعے سرمائے کی مارکیٹ کر فروغ دینا اور اسے مستحکم بنانا۔

ان مقاصد کے حصول کے لیے ہماری حکمت عملی پر مبنی منصوبہ درج ذیل امور انجام دے گا:
٭ مختلف خدمات عامہ خصوصاً روزمرہ اشیاء کی صورت میں ایک ریگولیٹری فریم ورک تشکیل دے کر صارفین کے مفادات کا تحفظ کرنا۔
٭ معاشی قوت کو چند مخصوص ہاتھوں سے نکالنا اور ان اثاثہ جات کی ملکیت کو محفوظ بنانا۔
٭ نجکاری کے نتیجے میں فارغ ہونے والے ملازمین کو مناسب معاوضہ دینا اور ان کی ملازمت کے لیے تربیت میں مدد دینا۔

ایک جامع معاشی ماحول کی تشکیل
نجکاری کو معاشی بحالی کے لیے ایک اہم عنصر کے طور پر قبول کیا گیا ہے اور حکومت کے معاشی ایجنڈے میں سیاسی قیادت کا واضح عزم دکھائی دیتا ہے۔ حکومت سرکاری اثاثوں کی نجکاری کو ایک آزاد معاشی ماحول تشکیل دینے میں بنیادی خصوصیت خیال کرتی ہے جو ملکی اور بین الاقوامی سرمایہ کاری کو تیز کرے گا اور مسابقت کر فروغ دے گا۔

اس جامع ماحول کے لیے ایک مناسب لائحہ عمل پیش کرے گی جس میں سرکاری و نجی شعبے کی کوششوں سے وسیع تر استعداد کو آزادانہ طور پر کام کرکے فروغ دیا جائے گا لیکن ایسا ایک مسابقتی ماحول میں کیا جائے گا۔یہ لائحہ عمل:
٭ رکاوٹوں پرمبنی قانون سازی کو ختم کرے گا اور معاشی قواعد کے نیٹ ورک کو رواج دے گا تاکہ تمام شعبہ جات اپنی سطح پر موثر طور پر خدمات انجام دی سکیں۔
٭ سرمائے کی مارکیٹوں کو فروغ دینا اور انھیں وسعت دینا تاکہ بچتوں کو متحرک کیا جاسکے اور انھیں پیداواری شعبوں میں بروئے کار لایا جاسکے۔
٭ مادی اور ٹیکنالوی کے انفراسٹرکچر کی مرمت و دیکھ بھال، درجے میں اضافے اور ترقی کے لیے دستیاب وسائل مختص کرنا۔
٭ صارفین کو بہتر تحفظ فراہم کرے گا اور ایک یا دو خودمختار نظام حسب ضرورت تشکیل دے کر ماحول کو موثر بنائے گا۔

علاوہ ازیں معاشی اصلاحات کو استحکام دینے اور نئی پالیسی پر اعتماد سازی کو فروغ دینے کے لیے اس عبوری عرصہ میں سرکاری اثاثہ جات کی فروخت کے ذریعے فنڈز حاصل کیے جائیں گے جنھیں سرکاری اخراجات سمیت سماجی شعبوں اور انفراسٹرکچر کی ترقی کے لیے استعمال میں لایا جائے گا۔

قرضہ سے نجات
حکومت کو یقین ہے کہ سرکاری اثاثوں کی نجکاری کے ذریعے قوم کو قرضوں سے نجات مل جائے گی اور بہت سے بنیادی فوائد میسر آئیں گے۔ اس طرح سرکاری قرضوں کا بوجھ کم ہوجائے گا۔ ملکی اور بین الاقوامی قرضوں کو ان سرکاری اثاثوں کی فروخت کے ذریعے کم کیا جاسکتا ہے جن کے لیے ضروری طور پر قرضے لیے گئے تھے۔

نجکاری کے عمل کے نتیجے میں سرکاری شعبے کی صنعتوں کی بحالی اور ترقی کے لیے تازہ قرضے حاصل کیے جاسکیں گے۔ کوشش یہ ہوگی کہ سرکاری اثاثوں کے فروخت سے حاصل ہونے والے فنڈز کو عمومی ریونیو بنانے کے بجائے اس کا موثر اور بہتر استعمال کیا جائے۔ ان فنڈز کے ذریعے قرضوں سے نجات حاصل کی جائے گی اور مزید برآں سرکاری اخراجات سمیت سماجی پروگراموں اور انفراسٹرکچر کی ترقی کے لیے انھیں استعمال کیا جائے گا۔

مالی بوجھ میں کمی
سرکاری اداروں کے لیے سبسڈی کی سالانہ تفویض قومی وسائل کا مسلسل ضیاع ہے۔ ان سبسڈیز میں کمی کی جائے گا جہاں تک ممکن ہوگا سرکاری اثاثوں کو فروخت کیا جائے گا جس سے بجٹ کے خسارے کو پورا کیا جائے گا اور یہ ایک مستحسن اقدام ہوگا۔

بہتر استعداد کار
نجکاری کے لیے دلیل یہ دی جاتی ہے کہ سرکاری اداروں کی مطلوبہ استعداد کار کے حصول کے لیے تکنیکی استعداد ضروری ہے۔ توقع یہ ہے کہ نجکاری کا عمل متبادل انتظامات (انتخاب، مسابقتی قیمت، ٹیکنالوجی کی ترقی، بہتر خدمات) کے فروغ کے ذریعے تمام شعبوں کی متعلقہ استعداد کار کو بہتر بنائے گا۔ ان فوائد کے حصول کے لیے یہ منصوبہ بنایا گیا ہے کہ جملہ کوششوں کو دوگنا کیا جائے اور اس کے اثرات کو مفید اور سود مند بنایا جائے۔